Dialogue

Vocabulary

Learn New Words FAST with this Lesson’s Vocab Review List

Get this lesson’s key vocab, their translations and pronunciations. Sign up for your Free Lifetime Account Now and get 7 Days of Premium Access including this feature.

Or sign up using Facebook
Already a Member?

Lesson Notes

Unlock In-Depth Explanations & Exclusive Takeaways with Printable Lesson Notes

Unlock Lesson Notes and Transcripts for every single lesson. Sign Up for a Free Lifetime Account and Get 7 Days of Premium Access.

Or sign up using Facebook
Already a Member?

Lesson Transcript

فیصل مسجد پاکستان کی سب سے بڑی مسجد ہے اور اسلام آباد میں واقع ہے۔
یہ شہر کی سب سے مشہور علامتی نشانیوں میں سے ایک ہے اور ایک بدوی خیمہ کی ہیئت میں ڈیزائن کی گئی ہے۔
فیصل مسجد شہر کے سب سے شمالی حصہ میں واقع ہے اور کوہ مارگلہ کی ترائی میں کوہ ہمالیہ کے سلسلے کی چھوٹی پہاڑیوں میں ایک قابل رشک مقام پر ہے۔
مسجد پورے شہر سے بلندی پر ہے اور مرگلہ پہاڑیاں اس کے پس منظر میں واقع ہیں۔
اونچائی اس کی عظمت ظاہر کرتی ہے اور اس کی وجہ سے شہر کے سبھی حصوں میں موجود لوگ دن اور رات کسی بھی وقت اس کو دیکھ سکتے ہیں۔
سعودی فرمانرواں فیصل بن عبد العزیز نے فیصل مسجد کی تعمیر کروائی، اسی وجہ سے ان کے نام سے اسے موسوم کیا گیا ہے۔
اس کی تعمیر کا محرک ایک قومی مسجد تعمیر کرنے کی خواہش تھی اور پاکستانی حکومت نے سترہ مختلف ممالک کے معماروں کی تجاویز قبول کیں اور اس کے بعد ترکی کے ویڈٹ ڈالو کے ڈیزائن کو منتخب کیا۔
معمار کو منفرد اور جدید ڈیزائن کے فن تعمیر کے لئے آغا خان ایوارڈ ملا۔
چوں کہ اس مسجد کا مجموعی ڈھانچہ بدوی خیمہ کی مانند دکھائی دیتا ہے، اس میں محراب اور گنبد نہیں ہیں جو دنیا کی زیادہ تر مساجد میں ہوتے ہیں، اگرچہ اس میں کچھ مینارے ہیں۔
اس کے خیال سے لیکر مکمل عمل 1966 میں شروع ہوا، اگرچہ حقیقت میں اس کی تعمیر شروع ہونے میں دس سال لگ گئے اور اس کی تکمیل میں مذید دس سال لگے۔
بادشاہ عبدالعزیز کو 1975 میں قتل کر دیا گیا، اور مسجد کی تکمیل کے بعد، پاکستانی حکومت نے اس کا نام بدل کر ان کے نام پر رکھنے کا فیصلہ کیا کیونکہ انہوں نے اس میں مالی مدد کی تھی۔

1 Comment

Hide
Please to leave a comment.
😄 😞 😳 😁 😒 😎 😠 😆 😅 😜 😉 😭 😇 😴 😮 😈 ❤️️ 👍
Sorry, please keep your comment under 800 characters. Got a complicated question? Try asking your teacher using My Teacher Messenger.
Sorry, please keep your comment under 800 characters.

UrduPod101.com
Friday at 6:30 pm
Your comment is awaiting moderation.

فیصل مسجد پاکستان کی سب سے بڑی مسجد ہے اور اسلام آباد میں واقع ہے۔
یہ شہر کی سب سے مشہور علامتی نشانیوں میں سے ایک ہے اور ایک بدوی خیمہ کی ہیئت میں ڈیزائن کی گئی ہے۔
فیصل مسجد شہر کے سب سے شمالی حصہ میں واقع ہے اور کوہ مارگلہ کی ترائی میں کوہ ہمالیہ کے سلسلے کی چھوٹی پہاڑیوں میں ایک قابل رشک مقام پر ہے۔
مسجد پورے شہر سے بلندی پر ہے اور مرگلہ پہاڑیاں اس کے پس منظر میں واقع ہیں۔
اونچائی اس کی عظمت ظاہر کرتی ہے اور اس کی وجہ سے شہر کے سبھی حصوں میں موجود لوگ دن اور رات کسی بھی وقت اس کو دیکھ سکتے ہیں۔
سعودی فرمانرواں فیصل بن عبد العزیز نے فیصل مسجد کی تعمیر کروائی، اسی وجہ سے ان کے نام سے اسے موسوم کیا گیا ہے۔
اس کی تعمیر کا محرک ایک قومی مسجد تعمیر کرنے کی خواہش تھی اور پاکستانی حکومت نے سترہ مختلف ممالک کے معماروں کی تجاویز قبول کیں اور اس کے بعد ترکی کے ویڈٹ ڈالو کے ڈیزائن کو منتخب کیا۔
معمار کو منفرد اور جدید ڈیزائن کے فن تعمیر کے لئے آغا خان ایوارڈ ملا۔
چوں کہ اس مسجد کا مجموعی ڈھانچہ بدوی خیمہ کی مانند دکھائی دیتا ہے، اس میں محراب اور گنبد نہیں ہیں جو دنیا کی زیادہ تر مساجد میں ہوتے ہیں، اگرچہ اس میں کچھ مینارے ہیں۔
اس کے خیال سے لیکر مکمل عمل 1966 میں شروع ہوا، اگرچہ حقیقت میں اس کی تعمیر شروع ہونے میں دس سال لگ گئے اور اس کی تکمیل میں مذید دس سال لگے۔
بادشاہ عبدالعزیز کو 1975 میں قتل کر دیا گیا، اور مسجد کی تکمیل کے بعد، پاکستانی حکومت نے اس کا نام بدل کر ان کے نام پر رکھنے کا فیصلہ کیا کیونکہ انہوں نے اس میں مالی مدد کی تھی۔